Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd

Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd Himmel Pharmaceuticals is a speciality based company dealing with high quality oncology / Cardiology & Radiology products . We have global partners for these high quality products from Germany , Spain , France , Portugal ,Iceland ,Turkey & Bangladesh.

Operating as usual

08/11/2021

Bugün, radyoloji biliminin doğduğu, hastalıkların tanı ve tedavisinde kullanılmaya başlandığı gündür. Radyoloji uzmanlarının, teknikerlerinin ve teknisyenlerinin #dünyaradyolojigünü kutlu olsun.

#dunyaradyolojigunu #radyolojigunu #onko #onkoilac
#internationaldayofradiology #onkokocsel #onkopharmaceutical

www.onkokocsel.com

Photos from Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd's post
31/10/2021

Photos from Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd's post

30/10/2021
Pakistan has the highest incidence rate of breast cancer among Asian countries: one in every nine women has a lifetime r...
29/10/2021

Pakistan has the highest incidence rate of breast cancer among Asian countries: one in every nine women has a lifetime risk of being diagnosed with breast cancer. By reason of many misconceptions about the etiology of the disease and socioeconomic factors, Pakistani women have very low rates of early detection and diagnose breast cancer at advance stages with fewer chances of survival. The key to cure the breast cancer is early diagnosis.

Pakistan has the highest incidence rate of breast cancer among Asian countries: one in every nine women has a lifetime risk of being diagnosed with breast cancer. By reason of many misconceptions about the etiology of the disease and socioeconomic factors, Pakistani women have very low rates of early detection and diagnose breast cancer at advance stages with fewer chances of survival. The key to cure the breast cancer is early diagnosis.

24/10/2021
پاکستان میں اٹامک انرجی کمیشن کے تحت کینسر کے 18ہسپتال جدید ترین آلات، ماہر ڈاکٹرز کے ساتھ خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔ ا...
22/10/2021

پاکستان میں اٹامک انرجی کمیشن کے تحت کینسر کے 18ہسپتال جدید ترین آلات، ماہر ڈاکٹرز کے ساتھ خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔ ان میں انمول ہسپتال لاہور ملک کا سب سے بڑا کینسر ہسپتال ہے جس میں 80فیصد مریضوں کا علاج ہو رہا ہے اس کے علاوہ مزید دو ہسپتال گلگت اور مظفر آباد میں جلد ہی کام شروع کر دیں گے۔
ان خیالات کا اظہار ڈائریکٹر انمول ہسپتال لاہور ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے میر خلیل الرحمٰن میموریل سوسائٹی جنگ گروپ آف نیوز پیپرز اور ہیمل فارماسیوٹیکل پرائیویٹ لمیٹڈ کے زیر اہتمام خصوصی سیمینار بعنوان بریسٹ کینسر کیا ہے،وجوہات، بچائو میں کیا۔
سیمینار کی صدارت ڈائریکٹر انمول ہسپتال ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے کی۔ حرف آغاز و تشکر ڈائریکٹر سیلز اینڈ مارکیٹنگ ہمیل فارما سیوٹیکل پرائیویٹ لمیٹڈ ڈاکٹر عثمان امین بٹ نے پیش کیا۔
ماہرین کے پینل میں ڈاکٹر مصباح مسعود، ڈاکٹر عامرہ شامی، ڈاکٹر رافعہ عثمان، ڈاکٹر مدیحہ علی خان، ڈاکٹر عذرا پروین ڈاکٹر رافعہ شہزاد شامل تھیں۔
میزبانی کے فرائض صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی ،سنئیر ایڈیٹر وچیئرمین ایم کے آر ایم ایس واصف ناگی نے سر انجام دیئے۔
تلاوت قرآن پاک اور نعت رسولؐ مقبول کی سعادت بینش ملک نے حاصل کی۔
ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کینسر کے متعلق اس طرح کے آگاہی سیمینارز عوام میں معلومات کا باعث بنتے ہیں۔ اس سے لوگوں میں مرض کے متعلق آگاہی آتی ہے اور امراض کے متعلق جو وہم ان کے دل میں ہوتا ہے وہ دور ہوتا ہے۔ کینسر کے علاج کے حوالے سے اب ہسپتالوں میں اضافہ ہو رہا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ جدید طریقہ علاج اور سہولیات بھی متعارف ہو رہی ہیں۔ اب حالات بہتر ہو رہے ہیں ماضی کی نسبت۔
اب ہم نے بریسٹ کلینکس کا بھی افتتاح کر دیا ہے۔ پاکستان میں اٹامک انرجی کمیشن کے تحت 18ہسپتال پاکستان میں کام کر رہے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ ملکی دفاع، زراعت، پاور جنریشن میں بھی اٹامک انرجی اپنے حصے کا کردار ادا کر رہی ہے۔ سب سے پہلے لاہور اور کراچی میں ہسپتال شروع کئے گئے پھر اس کے بعد پانچ سال کے وقفے سے ایک ایک ہسپتال بنتا گیا۔
ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے کہا کہ انمول میں ریٹس کافی کم ہیں ہم منافع نہیں لیتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہیموٹالوجی ڈیپارٹمنٹ میں بچوں کے کینسر کو دیکھا جاتا ہے ان 18ہسپتالوں میں سب سے بڑا سیٹ اپ انمول میں ہے۔ بعض مریض ادویات اور ٹیکے افورڈ نہیں کر پاتے ہیں تو اس صورت میں ہم کوشش کرتے ہیں کہ صحت کارڈ، ویلفیئر سوسائٹی، مخیر حضرات فنڈز کے ذریعے ان کی مدد کر سکیں اس کے علاوہ انمول میں سب سے پہلے ایک پروجیکٹ شروع کیا ہے جس میں کینسر کے لا علاج مریضوں کو چند دن رکھا جاتا ہے تاکہ ان کی زندگی کو آرام دہ بنایا جا سکے۔
ڈاکٹر عثمان امین بٹ نے کہا کہ پوری دنیا کے ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ کینسر کا علاج اگر بروقت شروع کر دیا جائے تو مریض شفایاب ہو سکتا ہے ہمارے ہاں زیادہ تر لوگ ابتدائی علامات کو نظر انداز کرتےہیں۔جس کی وجہ سے مرض شدت اختیار کرتا ہے۔
ڈاکٹر رافعہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چھاتی کا سرطان خواتین میں پایا جانے والا عام کینسر ہے۔ انمول ہر سال عوامی آگاہی کے لئے پروگرامز کا انعقاد کرتا ہے جس کا مقصد عوام تک مفید معلومات پہنچانا ہے۔ یاد رکھیں کہ بروقت تشخیص اور مکمل علاج کے ذریعے کینسر سے بچائو ممکن ہے۔
ڈاکٹر مصباح مسعود نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین میں ہونے والی کینسر کی وجہ سے اموات میں بریسٹ کیسنر دوسرے نمبر پر ہے یہ ایک عالمی مسئلہ ہے یورپ اور یو ایس میں اس کی وجہ سے بہت زیادہ اموات ہوتی ہیں جبکہ ایشیائی ممالک میں بریسٹ کینسر کے حوالے سے پاکستان پہلے نمبر پر ہے۔ یہ کینسر مردوں میں صرف ایک فیصد پایا جاتا ہے۔
او پی ڈی میں آنے والی نصف خواتین کی تعداد بریسٹ کینسر میں مبتلا ہوتی ہیں۔ ہر آٹھ میں سے ایک عورت اس کا شکار ہے جبکہ 39میں سے ایک عورت اس کے باعث زندگی کی بازی ہار جاتی ہے ایک اندازے کے مطابق سال میں 26000کیسز پاکستان میں کینسر کے آتے ہیں جبکہ 14000خواتین زندگی کی بازی ہار جاتی ہیں۔
عموماً 40سے 45سال کی خواتین اس کا شکار ہوتی ہیں مگر اب 20سے 25سال کی خواتین بھی اس کا شکار ہو رہی ہیں۔ دنیا میں سکریننگ عام ہے اسی لئے وہاں پر پہلی یا دوسری سٹیج پر اس کی تشخیص ہو جاتی ہے مگر پاکستان میں تیسری یا چوتھی سٹیج پر تشخیص ہوتی ہے۔ہمارے ہاں خواتین گلٹی بننے کے باوجود لیٹ ڈاکٹر سے رجوع کرتی ہیں۔ہمیں لوگوں میں سے اس حوالے سے خوف دور کرنا ہے اور ان میں جو افواہیں پائی جاتی ہیں ان کو بھی ختم کرنا ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ الکوحل ،سگریٹ نوشی، برتھ کنٹرول پلز کا استعمال بھی کینسر کا باعث بن سکتا ہے ،کسی بھی گلٹی کی صورت میں جلد تشخیص کروائیں کیونکہ شروع میں سکریننگ کے باعث یہ قابل علاج ہے۔
ڈاکٹر رافعہ شہزاد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شروع میں بریسٹ کینسر کی تشخیص سے یہ نہیںپھیلتا اور گلٹی کاسائز 1.5cmسے کم ہوتا ہے اور اس میں 94%مریض مکمل صحت یاب ہو جاتی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بیس سال کی عمر سے لڑکیوں کو ماہواری کے دو دن بعد ہر مہینے اپنا معائنہ خود کرنا چاہئے اگر کوئی غیر معمولی گلٹی محسوس ہو تو فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں 20سے 39سال تک کی عمر میں تین سال بعد اپنا معائنہ ضرور کروائیں جبکہ چالیس سال کی عمر میں ہر سال معائنہ کروائیں۔ میموگرافی اس کی تشخیص کے لئے سپیشل ایکسرے ہے جو کہ کینسر کی علامات ظاہر ہونے سے پہلے اس کی تشخیص کر لیتا ہے اس کے علاوہ ELASTOGRAPHYبھی اس کی تشخیص میں ایک نئی جدت ہے۔ اس کی بدولے گلٹی کے سخت یا نرم ہونے کا اندازا ہوتا ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ اگر جڑوں والی گلٹی کا شک ہو تو اس کی تشخیص کے لئے بائیوپسی کی جاتی ہے اور یہ دو طرح کی ہوتی ہے۔
FNAC
COREBIOPSY
لوگوں میں عام تاثر پایا جاتا ہے کہ اس سے کینسر پھیل جاتا ہے جبکہ ایسا بالکل نہیں ہے۔
ڈاکٹر مد یحہ علی خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بریسٹ کنزونگ سرجری میں صرف گلٹی نکالی جاتی ہے اس کے علاوہ یہ پہلی یا دوسری سٹیج پر کی جاتی ہے مگر دوران حمل نہیں کی جاتی اگر گلٹی چھوٹے چھوٹے ذرات کی صورت میں ہو تو بھی یہ نہیں کی جاتی۔اس کے علاوہ دوران حمل جو خواتین بریسٹ کینسر میں مبتلا ہو جائیں یا جو جلدی امراض میں مبتلا ہوں ان کا ایم آر ام کیا جاتا ہے۔AUTOLOGUS میں بھی ٹشوز مریض کے جسم سے لئے جاتے ہیں۔
ڈاکٹر عامرہ شامی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کینسر کا علاج اس کی سٹیج کے مطابق کیا جاتا ہے پہلی سٹیج میں گلٹی 2cmسے کم ہوتی ہے دوسری میں دو سے پانچ سینٹی میٹر تک اور تیسری میں 5cmسے بڑھ جاتی ہے پھر چوتھی سٹیج پر یہ دماغ، ہڈیوں اور دیگر حصوں میں پھیلنے لگ جاتی ہے۔ اس کا علاج ریڈیو تھراپی کے ذریعے ممکن ہے اس سے دوبارہ گلٹی بننے کے اثرات پچاس فیصد کم ہو جاتے ہیں۔
انہوں نے مزید کہاکہ ریڈیشن کے اثرات دل،جلد اور جسم کے دوسرے حصوں پر آتے ہیں اس لئے ہم تھری ڈی تھراپی کرتے ہیں،یہ ہفتے میں پانچ دن لگائی جاتی ہے اور بریسٹ کینسر کیسز میں چار ہفتے تک کی جاتی ہے۔اس کے علاوہ کیمو تھراپی بھی موت کے چانسز کو تیس فیصد کم کر دیتی ہے۔کیمو تھراپی بلڈ سیلز کی کمی کی صورت میں بھی کی جاتی ہے ،کیمو تھراپی کی وجہ سے بال گرتے ہیں، ڈائریا ،الٹی،بھوک نہ لگنے کی شکایت ہوتی ہے،مگر اب ان اثرات کے لئے بھی جدید ادویات موجود ہیں جس سے مریض کو آرام ملتاہے۔
انہوں نے کہا کہ بریسٹ کینسر کے حوالے سے بہت سی افواہیں ہیں جیسا کہ جڑی بوٹیوں سے علاج ممکن ہے، میموگرام ہر سال کروانے سے کینسر ہو سکتا ہے وغیرہ وغیرہ،لوگوں میں موجود اس طرح کی غلط فہمیوں کو دور کرنے کی اشد ضرورت ہے۔
ڈاکٹر عذرا پروین نے کہا کہ بریسٹ کینسر میں بون سکین، سی ٹی سیکن، پیٹ سکین، ایم آر آئی اکثر کرنا پڑتی ہے اس کے علاوہ بریسٹ کینسر میں ہارمونل تھراپی مددگار ثابت ہوتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ انمول میں ایٹمی دوائی کے ذریعے جسم میں بیماریوں کے سٹیٹس کو دیکھا جاتا ہے اس میں مریض کو ایٹمی دوائی کا ٹیکہ لگایا جاتا ہے اس کے بعد دو سے چار گھنٹے تک انتظار کیا جاتا ہے تاکہ دوائی مریض کی ہڈیوں تک چلی جائے اس دوران ہم مریض کو کہتے ہیں کہ پانی کا زیادہ استعمال کیا جائے اس دوائی کے تابکاری اثرات نہ ہونے کے برابر ہوتے ہیں وہ خواتین جو بریسٹ فیڈنگ کروا تی ہیں ان کو کہا جاتا ہے کہ اس کے چوبیس گھنٹے تک بچے کو فیڈ نہ کروائیں۔
اس کے علاوہ FDG PET/CTجدید ہے جو کہ انمول میں کیا جاتا ہے اس میں مریض کو چوبیس گھنٹے پہلے کاربوہائیڈریٹس کا استعمال بند کروا دیتے ہیں اس میں بھی ایٹمی دوائی کا ٹیکہ لگایا جاتا ہے۔
واصف ناگی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہر سال عوامی آگاہی کے لئے ہیمل فارسیوٹیکل اور ڈاکٹر ابوبکر شاہد سیمینار کا انعقاد کرواتے ہیں جس کے لئے میں ان کا شکرگزار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق 2020میں ایک کروڑ افراد کینسر کی وجہ سے زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں۔ کینسر کی بہت سے اقسام ہیں جن میں سب سے زیادہ شرح بریسٹ کینسر کی ہے۔
ہمارے ہاں بہت ساری خواتین صرف ہچکچاہٹ کی وجہ سے بر وقت علاج نہیں کروا پاتی ہیں اور اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھتی ہیں۔میرے خیال میں اس طرح کے عوامی آگاہی سیمینار عوام میں آگاہی کا بہترین ذریعہ ہیں۔اور امید ہے اس سیمینار کی وجہ سے بہت سی خواتین میں آگاہی آئی ہو گی۔

پاکستان میں اٹامک انرجی کمیشن کے تحت کینسر کے 18ہسپتال جدید ترین آلات، ماہر ڈاکٹرز کے ساتھ خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔ ان میں انمول ہسپتال لاہور ملک کا سب سے بڑا کینسر ہسپتال ہے جس میں 80فیصد مریضوں کا علاج ہو رہا ہے اس کے علاوہ مزید دو ہسپتال گلگت اور مظفر آباد میں جلد ہی کام شروع کر دیں گے۔
ان خیالات کا اظہار ڈائریکٹر انمول ہسپتال لاہور ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے میر خلیل الرحمٰن میموریل سوسائٹی جنگ گروپ آف نیوز پیپرز اور ہیمل فارماسیوٹیکل پرائیویٹ لمیٹڈ کے زیر اہتمام خصوصی سیمینار بعنوان بریسٹ کینسر کیا ہے،وجوہات، بچائو میں کیا۔
سیمینار کی صدارت ڈائریکٹر انمول ہسپتال ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے کی۔ حرف آغاز و تشکر ڈائریکٹر سیلز اینڈ مارکیٹنگ ہمیل فارما سیوٹیکل پرائیویٹ لمیٹڈ ڈاکٹر عثمان امین بٹ نے پیش کیا۔
ماہرین کے پینل میں ڈاکٹر مصباح مسعود، ڈاکٹر عامرہ شامی، ڈاکٹر رافعہ عثمان، ڈاکٹر مدیحہ علی خان، ڈاکٹر عذرا پروین ڈاکٹر رافعہ شہزاد شامل تھیں۔
میزبانی کے فرائض صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی ،سنئیر ایڈیٹر وچیئرمین ایم کے آر ایم ایس واصف ناگی نے سر انجام دیئے۔
تلاوت قرآن پاک اور نعت رسولؐ مقبول کی سعادت بینش ملک نے حاصل کی۔
ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کینسر کے متعلق اس طرح کے آگاہی سیمینارز عوام میں معلومات کا باعث بنتے ہیں۔ اس سے لوگوں میں مرض کے متعلق آگاہی آتی ہے اور امراض کے متعلق جو وہم ان کے دل میں ہوتا ہے وہ دور ہوتا ہے۔ کینسر کے علاج کے حوالے سے اب ہسپتالوں میں اضافہ ہو رہا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ جدید طریقہ علاج اور سہولیات بھی متعارف ہو رہی ہیں۔ اب حالات بہتر ہو رہے ہیں ماضی کی نسبت۔
اب ہم نے بریسٹ کلینکس کا بھی افتتاح کر دیا ہے۔ پاکستان میں اٹامک انرجی کمیشن کے تحت 18ہسپتال پاکستان میں کام کر رہے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ ملکی دفاع، زراعت، پاور جنریشن میں بھی اٹامک انرجی اپنے حصے کا کردار ادا کر رہی ہے۔ سب سے پہلے لاہور اور کراچی میں ہسپتال شروع کئے گئے پھر اس کے بعد پانچ سال کے وقفے سے ایک ایک ہسپتال بنتا گیا۔
ڈاکٹر ابوبکر شاہد نے کہا کہ انمول میں ریٹس کافی کم ہیں ہم منافع نہیں لیتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہیموٹالوجی ڈیپارٹمنٹ میں بچوں کے کینسر کو دیکھا جاتا ہے ان 18ہسپتالوں میں سب سے بڑا سیٹ اپ انمول میں ہے۔ بعض مریض ادویات اور ٹیکے افورڈ نہیں کر پاتے ہیں تو اس صورت میں ہم کوشش کرتے ہیں کہ صحت کارڈ، ویلفیئر سوسائٹی، مخیر حضرات فنڈز کے ذریعے ان کی مدد کر سکیں اس کے علاوہ انمول میں سب سے پہلے ایک پروجیکٹ شروع کیا ہے جس میں کینسر کے لا علاج مریضوں کو چند دن رکھا جاتا ہے تاکہ ان کی زندگی کو آرام دہ بنایا جا سکے۔
ڈاکٹر عثمان امین بٹ نے کہا کہ پوری دنیا کے ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ کینسر کا علاج اگر بروقت شروع کر دیا جائے تو مریض شفایاب ہو سکتا ہے ہمارے ہاں زیادہ تر لوگ ابتدائی علامات کو نظر انداز کرتےہیں۔جس کی وجہ سے مرض شدت اختیار کرتا ہے۔
ڈاکٹر رافعہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چھاتی کا سرطان خواتین میں پایا جانے والا عام کینسر ہے۔ انمول ہر سال عوامی آگاہی کے لئے پروگرامز کا انعقاد کرتا ہے جس کا مقصد عوام تک مفید معلومات پہنچانا ہے۔ یاد رکھیں کہ بروقت تشخیص اور مکمل علاج کے ذریعے کینسر سے بچائو ممکن ہے۔
ڈاکٹر مصباح مسعود نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین میں ہونے والی کینسر کی وجہ سے اموات میں بریسٹ کیسنر دوسرے نمبر پر ہے یہ ایک عالمی مسئلہ ہے یورپ اور یو ایس میں اس کی وجہ سے بہت زیادہ اموات ہوتی ہیں جبکہ ایشیائی ممالک میں بریسٹ کینسر کے حوالے سے پاکستان پہلے نمبر پر ہے۔ یہ کینسر مردوں میں صرف ایک فیصد پایا جاتا ہے۔
او پی ڈی میں آنے والی نصف خواتین کی تعداد بریسٹ کینسر میں مبتلا ہوتی ہیں۔ ہر آٹھ میں سے ایک عورت اس کا شکار ہے جبکہ 39میں سے ایک عورت اس کے باعث زندگی کی بازی ہار جاتی ہے ایک اندازے کے مطابق سال میں 26000کیسز پاکستان میں کینسر کے آتے ہیں جبکہ 14000خواتین زندگی کی بازی ہار جاتی ہیں۔
عموماً 40سے 45سال کی خواتین اس کا شکار ہوتی ہیں مگر اب 20سے 25سال کی خواتین بھی اس کا شکار ہو رہی ہیں۔ دنیا میں سکریننگ عام ہے اسی لئے وہاں پر پہلی یا دوسری سٹیج پر اس کی تشخیص ہو جاتی ہے مگر پاکستان میں تیسری یا چوتھی سٹیج پر تشخیص ہوتی ہے۔ہمارے ہاں خواتین گلٹی بننے کے باوجود لیٹ ڈاکٹر سے رجوع کرتی ہیں۔ہمیں لوگوں میں سے اس حوالے سے خوف دور کرنا ہے اور ان میں جو افواہیں پائی جاتی ہیں ان کو بھی ختم کرنا ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ الکوحل ،سگریٹ نوشی، برتھ کنٹرول پلز کا استعمال بھی کینسر کا باعث بن سکتا ہے ،کسی بھی گلٹی کی صورت میں جلد تشخیص کروائیں کیونکہ شروع میں سکریننگ کے باعث یہ قابل علاج ہے۔
ڈاکٹر رافعہ شہزاد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شروع میں بریسٹ کینسر کی تشخیص سے یہ نہیںپھیلتا اور گلٹی کاسائز 1.5cmسے کم ہوتا ہے اور اس میں 94%مریض مکمل صحت یاب ہو جاتی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بیس سال کی عمر سے لڑکیوں کو ماہواری کے دو دن بعد ہر مہینے اپنا معائنہ خود کرنا چاہئے اگر کوئی غیر معمولی گلٹی محسوس ہو تو فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں 20سے 39سال تک کی عمر میں تین سال بعد اپنا معائنہ ضرور کروائیں جبکہ چالیس سال کی عمر میں ہر سال معائنہ کروائیں۔ میموگرافی اس کی تشخیص کے لئے سپیشل ایکسرے ہے جو کہ کینسر کی علامات ظاہر ہونے سے پہلے اس کی تشخیص کر لیتا ہے اس کے علاوہ ELASTOGRAPHYبھی اس کی تشخیص میں ایک نئی جدت ہے۔ اس کی بدولے گلٹی کے سخت یا نرم ہونے کا اندازا ہوتا ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ اگر جڑوں والی گلٹی کا شک ہو تو اس کی تشخیص کے لئے بائیوپسی کی جاتی ہے اور یہ دو طرح کی ہوتی ہے۔
FNAC
COREBIOPSY
لوگوں میں عام تاثر پایا جاتا ہے کہ اس سے کینسر پھیل جاتا ہے جبکہ ایسا بالکل نہیں ہے۔
ڈاکٹر مد یحہ علی خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بریسٹ کنزونگ سرجری میں صرف گلٹی نکالی جاتی ہے اس کے علاوہ یہ پہلی یا دوسری سٹیج پر کی جاتی ہے مگر دوران حمل نہیں کی جاتی اگر گلٹی چھوٹے چھوٹے ذرات کی صورت میں ہو تو بھی یہ نہیں کی جاتی۔اس کے علاوہ دوران حمل جو خواتین بریسٹ کینسر میں مبتلا ہو جائیں یا جو جلدی امراض میں مبتلا ہوں ان کا ایم آر ام کیا جاتا ہے۔AUTOLOGUS میں بھی ٹشوز مریض کے جسم سے لئے جاتے ہیں۔
ڈاکٹر عامرہ شامی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کینسر کا علاج اس کی سٹیج کے مطابق کیا جاتا ہے پہلی سٹیج میں گلٹی 2cmسے کم ہوتی ہے دوسری میں دو سے پانچ سینٹی میٹر تک اور تیسری میں 5cmسے بڑھ جاتی ہے پھر چوتھی سٹیج پر یہ دماغ، ہڈیوں اور دیگر حصوں میں پھیلنے لگ جاتی ہے۔ اس کا علاج ریڈیو تھراپی کے ذریعے ممکن ہے اس سے دوبارہ گلٹی بننے کے اثرات پچاس فیصد کم ہو جاتے ہیں۔
انہوں نے مزید کہاکہ ریڈیشن کے اثرات دل،جلد اور جسم کے دوسرے حصوں پر آتے ہیں اس لئے ہم تھری ڈی تھراپی کرتے ہیں،یہ ہفتے میں پانچ دن لگائی جاتی ہے اور بریسٹ کینسر کیسز میں چار ہفتے تک کی جاتی ہے۔اس کے علاوہ کیمو تھراپی بھی موت کے چانسز کو تیس فیصد کم کر دیتی ہے۔کیمو تھراپی بلڈ سیلز کی کمی کی صورت میں بھی کی جاتی ہے ،کیمو تھراپی کی وجہ سے بال گرتے ہیں، ڈائریا ،الٹی،بھوک نہ لگنے کی شکایت ہوتی ہے،مگر اب ان اثرات کے لئے بھی جدید ادویات موجود ہیں جس سے مریض کو آرام ملتاہے۔
انہوں نے کہا کہ بریسٹ کینسر کے حوالے سے بہت سی افواہیں ہیں جیسا کہ جڑی بوٹیوں سے علاج ممکن ہے، میموگرام ہر سال کروانے سے کینسر ہو سکتا ہے وغیرہ وغیرہ،لوگوں میں موجود اس طرح کی غلط فہمیوں کو دور کرنے کی اشد ضرورت ہے۔
ڈاکٹر عذرا پروین نے کہا کہ بریسٹ کینسر میں بون سکین، سی ٹی سیکن، پیٹ سکین، ایم آر آئی اکثر کرنا پڑتی ہے اس کے علاوہ بریسٹ کینسر میں ہارمونل تھراپی مددگار ثابت ہوتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ انمول میں ایٹمی دوائی کے ذریعے جسم میں بیماریوں کے سٹیٹس کو دیکھا جاتا ہے اس میں مریض کو ایٹمی دوائی کا ٹیکہ لگایا جاتا ہے اس کے بعد دو سے چار گھنٹے تک انتظار کیا جاتا ہے تاکہ دوائی مریض کی ہڈیوں تک چلی جائے اس دوران ہم مریض کو کہتے ہیں کہ پانی کا زیادہ استعمال کیا جائے اس دوائی کے تابکاری اثرات نہ ہونے کے برابر ہوتے ہیں وہ خواتین جو بریسٹ فیڈنگ کروا تی ہیں ان کو کہا جاتا ہے کہ اس کے چوبیس گھنٹے تک بچے کو فیڈ نہ کروائیں۔
اس کے علاوہ FDG PET/CTجدید ہے جو کہ انمول میں کیا جاتا ہے اس میں مریض کو چوبیس گھنٹے پہلے کاربوہائیڈریٹس کا استعمال بند کروا دیتے ہیں اس میں بھی ایٹمی دوائی کا ٹیکہ لگایا جاتا ہے۔
واصف ناگی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہر سال عوامی آگاہی کے لئے ہیمل فارسیوٹیکل اور ڈاکٹر ابوبکر شاہد سیمینار کا انعقاد کرواتے ہیں جس کے لئے میں ان کا شکرگزار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق 2020میں ایک کروڑ افراد کینسر کی وجہ سے زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں۔ کینسر کی بہت سے اقسام ہیں جن میں سب سے زیادہ شرح بریسٹ کینسر کی ہے۔
ہمارے ہاں بہت ساری خواتین صرف ہچکچاہٹ کی وجہ سے بر وقت علاج نہیں کروا پاتی ہیں اور اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھتی ہیں۔میرے خیال میں اس طرح کے عوامی آگاہی سیمینار عوام میں آگاہی کا بہترین ذریعہ ہیں۔اور امید ہے اس سیمینار کی وجہ سے بہت سی خواتین میں آگاہی آئی ہو گی۔

Radiological Society of Pakistan & Himmel pharmaceuticals Pvt Ltd organized a one day seminar today at Hyderabad in whic...
17/10/2021

Radiological Society of Pakistan & Himmel pharmaceuticals Pvt Ltd organized a one day seminar today at Hyderabad in which all the senior Radiologists across the province participated !

Worthy speakers at this great event were ,

-Prof M Nadeem Prof of Radiology Aga khan university hospital Karachi

-Prof Waseem Mirza Prof of Radiology Aga khan university hospital Karachi

-Prof Sadaf Nasir
Prof of Radiology Liaquat National hospital Karachi

-Prof Shumail Arooj
Prof of Radiology
Jinnah post graduate Medical Centre Karachi

Address

793 D, Block C , Faisal Town
Lahore
54000

Opening Hours

Monday 09:00 - 17:00
Tuesday 09:00 - 17:00
Wednesday 09:00 - 17:00
Thursday 09:00 - 17:00
Friday 09:00 - 17:00
Saturday 09:00 - 17:00

Telephone

+923212020009

Alerts

Be the first to know and let us send you an email when Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd posts news and promotions. Your email address will not be used for any other purpose, and you can unsubscribe at any time.

Contact The Business

Send a message to Himmel Pharmaceuticals Pvt Ltd:

Videos

Nearby health & beauty businesses


Other Medical & Health in Lahore

Show All

Comments

As Part of Himmel we believe in best patient care and Team Work because team work multiplies your success and divides the task.
Dr. Gupta says, No one must die of cancer except out of carelessness; (1). First step is to stop all sugar intake, without sugar in your body, cancer cell would die a natural death. (2). Second step is to blend a whole lemon fruit with a cup of hot water and drink it for about 1-3 months first thing before food and cancer would disappear, research by Maryland College of Medicine says, it's 1000 times better than chemotherapy. (3). Third step is to drink 3 spoonfuls of organic coconut oil, morning and night and cancer would disappear, you can choose any of the two therapies after avoiding sugar. Ignorance is no excuse; I have been sharing this information for over 5 years. Let everyone around you know.God bless. "Dr. Guruprasad Reddy B V, OSH STATE MEDICAL UNIVERSITY MOSCOW, RUSSIA🏖🚥🚦 Encouraged each person receiving this newsletter to forward it to another ten people, certainly at least one life will be saved ... I've done my part, I hope you can help do your part. thanks!✍ Drinking hot lemon water can prevent cancer. Don't add sugar. Hot lemon water is more beneficial than cold lemon water. Both yellow n purple sweet potato have good cancer prevention properties. ✍ 01.✍ Often taking late night dinner can increase the chance of stomach cancer 02. ✍Never take more than 4 eggs per week 03. ✍Eating chicken backside can cause stomach cancer 04.✍ Never eat fruits after meal. Fruits should be eaten before meals 05. ✍Don't take tea during me********on period. 06.✍ Take less soy milk, no adding sugar or egg to soy milk 07.✍ Don't eat tomato with empty stomach 08.✍ Drink a glass of plain water every morning before food to prevent gall bladder stones 09.✍ No food 3 hrs before bed time 10.✍ Drink less liquor or avoid, no nutritional properties but can cause diabetes and hypertension 11. ✍Do not eat toast bread when it is hot from oven or toaster 12.✍ Do not charge your handphone or any device next to you when you are sleeping 13.✍ Drink 10 glasses of water a day to prevent bladder cancer 14. ✍Drink more water in the day time, less at night 15.✍ Don't drink more than 2 cups of coffee a day, may cause insomnia and gastric 16.✍ Eat less oily food. It takes 5-7 hrs to digest them, makes you feel tired 17.✍ After 5pm, eat less 18.✍ Six types of food that makes you happy: banana, grapefruit, spinach, pumpkin, peach. 19.✍ Sleeping less than 8 hrs a day may deteriorate our brain function. Taking Afternoon rest for half an hour may keep our youthful look. 20.✍ Cooked tomato has better healing properties than the raw tomato. Hot lemon water can sustain your health and make you live longer! Hot lemon water kills cancer cells ✍ Add hot water to 2-3 slices of lemon. Make it a daily drink The bitterness in hot lemon water is the best substance to kill cancer cells.✍ Cold lemon water only has vitamin C, no cancer prevention.✍ Hot lemon water can control cancer tumor growth. ✍ Clinical tests have proven hot lemon water works. ✍ This type of Lemon extract treatment will only destroy the malignant cells, it does not affect healthy cells.✍ Next... citric acid and lemon polyphenol in side lemon juice, can help reduce high blood pressure,✍ effective prevention of deep vein thrombosis, improve blood circulation✍, and reduce blood clots.✍ No matter how busy you are, please find the time to read this, then tell others to spread the love!✍ ♦After reading, share with others to spread the love! To take good care of their own health!✍🤝
Sir best of luck